مرد اور عورت-مساوات

2

آج وہ پوچھ رہے تھے کہ کچھ معاملوں میں مرد کو بڑا اور عورت کو چھوٹا کیوں تصور کرتے ہو؟
کیوں تم عورت کو پیچھے اور مرد کو آگے بڑھانا چاہتے ہو؟
کیوں تم انصاف سے کام نہیں لیتے؟
کیا تم لوگوں کے نزدیک مرد اور عورت دونوں انسان نہیں ہیں؟
اگر دونوں انسان ہیں تو پھر اس تفریق کا فائدہ؟
عرض کیا جناب عورتوں سے نا انصافی کا جتنا درد آپ کے دل میں ہے اس سے کہیں زیادہ میرے دل میں ہے. اس پر گفتگو پھر سہی. لیکن یہاں آپ کے مدعا میں آپ کی دلیل غلط ہے. عورت کو “عین” مرد کے بالمقابل کھڑا کردینا یا ایسا تصور کرنا میرے نزدیک ایک انتہا پسندی ہے جو کہ مخالفین کی انتہا پسندی کے نتیجے میں وجود میں آئی ہے. ۔
اعتدال بہت ضروری ہے یہاں.۔ کچھ معاملات ایسے ہیں جن میں عورت اور مرد برابر نہیں ہوسکتے. جس طرح فوج کا سپاہی اور جرنیل. یاسلطنت کا بادشاہ اور رعایا. یا ملک کا وزیر اعظم اور عوام ایک پلڑے میں برابر نہیں ہو پاتے اس طرح عورت اور مرد کے منصب میں بھی تھوڑا بہت فرق فطرت نے رکھا ہے. ۔
انسان کی ہزاروں سال کی تاریخ میں کوئی وقت بھی ایسا نہیں گزرا جب عورت مرد پر غالب رہی ہو. در اصل یہ تفریق نہیں بلکہ قدرتی امر ہے کہ ان دونوں میں مزاجی، طبعی اور نفسیاتی طور پر بھی کچھ فرق پائے جاتے ہیں.
یہ بات درست ہے کہ عورت انسان ہی ہے. لیکن آپ کی یہ دلیل ان دونوں اصناف کو بالکل ایک مقام پر لا کر رکھ دینے کے لیے کافی نہیں.۔ آپ انسانیت میں مشترک ہونے کی دلیل کو تھوڑا اور کشادہ کر کے حیوانیات تک لائیے تو آپ کو گائے، بھینس، بھیڑ اور بکروں کو بھی اس میں شامل کرنا پڑے گا. آپ اپنے بقا کے لیے ان سے گوشت حاصل کرتے ہیں جو کہ ان کے ساتھ نا انصافی ہے. حالانکہ حیوانیات میں انسان اور جانور سب مشترک ہیں. اسی طرح اور آگے بڑھ کر تمام جانداروں کو اس چادر میں سمیٹ لیجیے تو بقا اور آسائش سمیت زندگی کے تمام پہلو اس انصاف کے نتیجے میں متاثر ہوتے جاتے ہیں. ۔۔۔!!
در اصل یہاں انصاف کی بحث ہی بے کار ہے.
یہ منصب کی بات ہے. اور اس میں حق دار کو اس کا حق دینا ہی انصاف کہلاتا ہے. جس طرح جانداروں میں حیوان اعلی منصب پر ہیں. پھر حیوانوں میں انسان ہیں اسی طرح انسانوں میں مرد کا منصب بڑا ہے. پھر مردوں میں بھی مدارج ہیں. آپ مردانگی میں مشترک تمام مردوں کو بھی ایک لکڑی سے نہیں ہانک سکتے. یہی معاملہ مرد سے عورت کے تقابل میں بھی ہے.

مزمل شیخ بسمل

فیس بک تبصرے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *