ترکی میں فوجی بغاوت کی ناکامی پر مغرب کے افسوس کی وجہ

ترکی میں فوجی بغاوت کے آغاز پر مغربی میڈیا میں خوشی کی جو لہر دیکھی گئی وہ اس بغاوت کی ناکامی کے بعد مایوسی و غم و غصے میں تبدیل ہوگئی ہے۔ مغربی پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا میں لوگ اس بات پر نوحہ کناں ہیں کہ ترکی کو غیر مہذب بننے سے روکنے کی آخری…

میڈیا والوں کی کمینگی کو سمجھیے۔!!

مولوی اور ماروی … ! پروگرام شروع ہوتا ہے, یہ پروگرام ہے ان مظلوم بچیوں کے نام پر کہ جنہیں “Honor killing ” کی بھینٹ چڑھا دیا جاتا ہے پروگرام کا عنوان انتہائی مناسب ہے پروگرام کی ہوسٹ ایک طرحدار خاتون نادیہ مرزا ہیں اور پروگرام کے شرکاء ہیں . مولانا حمدللہ جے یو آئی…

قندیل بلوچ کا قتل اور غلط سیکولرمبحث

قندیل کو قندیل کس نے بنایا ؟ اس کی بے حرمت، بے قیمت زندگی اور اندوہناک موت کا ذمے دار کون ہے؟ اس بارے میں گزشتہ چند دن میں جو آرا نظر سے گزریں ، ان میں اکثریت ان کی ہے جنھوں نے یہ عادت بنا لی ہے کہ کوئی موضوع ملے اور لٹھ اٹھا…

غیرت کی عمرانیاتی تشریح، اسلام اور سیکولرزم – ذیشان وڑائچ

کبھی کبھی غیرت کے نام پر قتل کے واقعات سننے میں آتے ہیں تو میڈیا میں غیرت کی حقیقت اور سماج پر اس کے اثرات کو نظر انداز کر کے عجیب و غریب قسم کی بحثیں شروع ہوجاتی ہیں. ان بحثوں میں سیکولر نظریے کے تحت ان واقعات کا تحلیل و تجزیہ کیا جاتا ہے…

لبرل انتہاء پسندی دہشت اور جنگیں

عہد حاضر کی دہشت گردی اور جنگیں اپنی سرشت میں لبرل اور جمہوری ہیں۔ مذہبی قوتیں مزاحمت تو کرتی ہیں مگر وہ سماج کی اجتماعی ہیئت کو تبدیل کرنے سے قاصر ہیں۔ حکمران مذہب کا استعمال اپنی مرضی سے کرتے ہیں۔ کیونکہ حقیقی قوت ریاست کی ساخت میں مضمر ہے نہ کہ کسی عقیدے میں!…

ظالم کون ؟ خدا یا سیکولر

آج کل ایک طبقہ ہمہ وقت اس کوشش میں رہتا ہے کہ وہ کسی نہ کسی طریقے سے خدا، بالخصوص اسلامی خدا کو دنیا میں پائی جانے والی ہر برائی اور قتل و غارت کا ذمہ دار ٹھہرا سکے۔ یہ بلاشبہ ایک انتہائی طفلانہ اور غیر ذمے دارانہ رویہ ہے۔ نوع انسانی کی تاریخ بتاتی…

روشن خیالی کے لبادے میں فرقہ پرست

پاکستان ایک ایسا ملک ہے کہ جہاں روشن خیالی اور فرقہ پرستی کے مابین تفریق محض ان دو الفاظ کی تفریق کے علاوہ اور کچھ نہیں ہے۔ روشن خیال طالبان پر تنقید کرتے ہیں، جبکہ حقیقت میں ان کی تنقید کا محرک ان کی روشن خیالی نہیں بلکہ ان کی فرقہ پرستی ہے۔ گہرا تضاد…

کیا سارے فساد کی جڑ مذہب ہے؟

مغرب اور امریکا جیسے معاشرے جہاں ہمہ وقت مسلمانوں کے خلاف کسی نہ کسی شکل میں منفی پروپیگنڈا کیا جاتا ہے اورکوئی ایسا موقع نہیں گنوایا جاتا کہ جس میں مسلمانوں اور اسلام کو دہشت گردی سے نہ جوڑا گیا ہو تو ایسے میں مسلمانوں کے خلاف انتہا پسند مسیحیوں، یہودیوں ، آزاد خیالوں اورملحدوں…

اہل مغرب مریخ پر زندگی تلاش کر رہے ہیں اور مسلمان آلو پر اللہ تلاش کر رہے ہیں۔

خج کہنے تو یہ جملہ بڑا بامعنی لگتا ہے۔ اس میں غلط بھی کچھ نہیں ہے۔ مغرب سچ مچ مریخ پر زندگی تلاش کر رہا ہے اور مسلمان آلو پر اللہ کا نام تلاش کر رہے ہیں۔ لیکن کیا یہ جملہ سچ مچ بامعنی ہے؟ تھوڑی دیر کے لئے کچھ اور جملوں پر غور کریں۔…

سیکولری لاجک-اگر وہ بھی ایسا کرلیں۔۔

ایک استدلال یہ بھی وضع کیا جاتا ھے کہ”اگر ہندوستان بھی اپنے ملک کو ہندو سٹیٹ ڈیکلیر کردے یا امریکہ عیسائی سٹیٹ ڈیکلیئر کردے تو آپ مسلمانوں کو کیسا لگے گا؟ تو اگر آپ ان سے انکے ملکوں میں برابری کے حقوق طلب کرتے ہیں تو اپنے ملک میں یہ حقوق کیوں نہیں دیتے؟’ “ریسیپروسیٹی”…

کونسی شریعت-الزامی جواب

ذرا اپنی شریعت کی بابت بھی بتاؤ، یہ کہاں سے ثابت ہوتی ہے؟ تم جو روز ’جمہوریت‘ کی گردان لے کر بیٹھ جاتے ہو، کیا ہم پوچھ سکتے ہیں کونسی جمہوریت؟ امریکہ کی جمہوریت؟ برطانیہ کی جمہوریت؟ فرانس کی جمہوریت (جو پیچاری مسلم خاتون کے سکارف کا بوجھ نہ سہار سکی)؟ حسنی مبارک کی جمہوریت؟…

کونسی شریعت ؟

سیکولرز کا پیش کردہ اشکال: شریعت شریعت تو سب کرتے ہیں۔ مگر اِن داعیانِ شریعت میں سے آج تک کوئی یہ نہیں بتا سکا کہ کونسی شریعت؟ کوئی ایک شریعت ہو تو بات کریں۔ یہاں خمینی کی شریعت ہے۔ نمیری کی شریعت ہے۔ ضیاءالحق کی شریعت ہے۔ قذافی کی شریعت الگ ہے۔ سعودیہ میں وہابیوں…

یہ مولوی جوان بھی عجیب ہیں ۔۔!

ؐ یہ مولوی جوان بهی عجیب ہیں ان میں ‘اخلاق’ ڈهونڈے سے نہیں مل پاتے .. جب بهی دیکها لڑکیوں کو گهر چهوڑتے جدید مہذ ب تعلیم یافتہ کو ہی دیکها ..یہ مولوی گنوار کسی کی ماں بہن کو بهلا گهر کیوں چهوڑنے آئیں ایسی خدمت انکے نصیب میں کہاں ! ادهر دیکھ ساری موبائل…

اصلی لبرل اور دیسی لبرل

مشرقی اور خاص کر مسلم دنیا کے تناظر میں لبرلزم کی دو اقسام ہیں: ایک ‘باہر کا بنا ہوا، اصلی’۔ دوسرا، ‘یہاں کا بنا ہوا، دو نمبر’، جس کو ہمارے یہاں ‘اصلی’ کے نام پر بیچا جارہا ہے! اول الذکر کے مالکان خود اپنا تیارکردہ مال بیچ رہے ہیں، لہٰذا اُن کے ساتھ بات ہوسکتی…

سیکولر ازم ایک بےروح اور کھوکھلی تہذیب

ہمارے ہاں سیکولر ازم کا روئتی تصور روشن خیالی، جدت اور ترقی پسند ی سے مخصوص سمجھتا ہے حالانکہ سیکولرازم کی حقیقت یہ نہیں ہے بلکہ یہ سیکولرازم کا طریقہ واردات ہے ۔ یہ ابتداء میں ایک تنقیدی شکل میں سامنے آتا ہے جس کا ہدف کسی معاشرے کی قدامت اور اسکی پرانی روایات ہوتی…

123