خوارج اور انکا فکری منہج

امت مسلمہ میں جس گروہ نے سب سے پہلے سنت نبویؐ اور تعامل صحابہؓ کو نظر انداز کر کے قرآن کریم کو براہ راست سمجھنے اور اپنے فہم و استدلال کی بنیاد پر قرآن کریم کے احکام و قوانین کے تعین کا راستہ اختیار کیا وہ ’’خوارج‘‘ کا گروہ ہے۔ خوارج کے بارے میں خود…

‘داعش’ پس منظر اور پیش منظر

۲۰۱۱ء میں عالم عرب کے کئی ممالک میں آمریت سے نجات کی لہر اُٹھی۔ تیونس، مصر، لیبیا، شام اور یمن میں ایک نئے دور کا آغاز ہوا۔ ان میں سے ہر ملک کے حالات مختلف اور تفصیل طلب ہیں۔ اس لیے اختصار کی خاطر صرف شام ہی کا جائزہ لے لیتے ہیں۔ شامی عوام ۱۹۶۵ء…

جماعۃ التکفیر والہِجرۃ

’’تکفیری بیانیہ‘‘ کی نقاب کشائی کےلیے اس گمراہ فکر کی اصل خالق مصر کی جماعۃ التکفیر والہجرۃ پر ایک مضمون پیش ہے۔ یہ مضمون بعض عرب اہل علم کی جانب سے دورِحاضر کے گمراہ افکار و فرقہ جات پر تیارکردہ ایک انسائیکلوپیڈیا ’’الموسوعۃ الـمُیَسَّرَۃ فی الأدیان والمذاھب والأحزاب المعاصرۃ‘‘ سے ایک فصل تھی جو اردو…

تکفیری اور مرجئہ کون لوگ ہیں ؟

. تکفیری کون لوگ ہیں ؟ ساٹھ کی دہائی کے دوران، مصر کی جیلوں میں ایک جماعت کی تشکیل ہوئی تھی(دیکھیے ہمارا مضمون جماعت التکفیر والہجرہ)۔ اُس نے اپنا ایک نام رکھا، مگر مسلم داعیوں اور عامۃ الناس کی جانب سے اُس کو ایک اور نام دیا گیا۔ اُس نے اپنا جو نام رکھا وہ…

‘تکفیری بیانیہ’ اور اسکا ‘جوابی بیانیہ ‘

’تکفیر‘ کا ’جوابی بیانیہ‘ جو ہمیں بی بی سی نے بہت بروقت پڑھانا شروع کر دیا تھا، اور اس کے ساتھ میں این جی اوز، پھر یہاں کے جدت پسند، نیز عرب ملکوں میں جملہ اسلامی تحریکوں کی شدیدترین مخالفت میں سامنے آنے والی اور ان میں سے ایک ایک کو ’تکفیری‘ ٹھہرانے والی ایک…

خوارج، مرجئہ، اہلسنت اور تکفیر

اہل سنت کے نزدیک ضروری ہے کہ ایک شخص ”دل کی تصدیق“ کے ذریعے بھی شرک سے دامن کش ہو، ”زبان کے اقرار“ کے ذریعے بھی اور پھر ”عملاً“ بھی شرک کو خیرباد کہے۔ اہل سنت کے نزدیک شرک و کفر ’دل کی تکذیب‘ کے ذریعے بھی ہوسکتا ہے، ’زبان کے انکار‘ کے ذریعے بھی،…

مدارس اوردورحاضرکےخوارج کی فقہ میں فرق

محترم جاوید احمد غامدی صاحب نے اپنے جوابی بیانیے میں، سفرِ امریکا میں اور دیگر مواقع پر بکرات ومرات اس بات کا ذکر کیا ہے موجودہ دور میں مسلمانوں کی طرف سے جو ٹکراؤ اور شدت پسندی کی مہم جاری ہے، وہ نتیجہ ہے اس دینی فکر کا جو مدرسوں میں پڑھائی جاتی ہے اور…

عسکریت پسندی، مدارس اور غامدی صاحب

یہ بات مختلف مرتبہ لکھی گئی ہے کہ مسلم فکری روایت میں اگر مختلف علمی امور موجود ہیں تو ان سے ناجائز فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے، لیکن یہ بات ہرگز اس کو مستلزم نہیں کہ اس سے دہشت پسندی ہی کا بیانیہ تیار ہو۔ غامدی مکتبہ فکر کے ایک صاحب علم نے ایک تحریر…

اباجیت پسندی کا بیانیہ بجواب انتہاء پسندی کا بیانیہ

علم کی دنیا دیانت داری، غیر جانبداری اور حقیقت کی مکمل تصویر کشی کی دنیا ہوتی ہے۔ ہمارے ہاں بدقسمتی سے straw-man fallacy یعنی مخالف نظریات کو پہلے ایک مخصوص سانچے میں ڈھالنا اور پھر اُن کا بطلان کرنا ایک عام رویہ ہے۔کچھ عرصہ پہلے المورد کے سند یافتہ صحافی و دانشور جناب خورشید ندیم…

خواہش اورداعش کا فرق

داعش کے موضوع پر جناب خورشید ندیم کا کالم پڑھا تو بھارت کے معروف صاحبِ دانش جناب اسرار عالم یاد آ گئے۔برسوں پہلے ان کی ایک کتاب کا مطالعہ کیا جس میں انہوں نے یہودی سازشوں کا ذکر کیا تھا، مطالعے کا حاصل یہ تھا کہ مہینوں میں یہی سوچتا رہا : کیا میں ایک…

روایتی بیانیےکوشدت پسندی کابیانیہ قرار دینے کی واردات

متبادل بیانیے والے حضرات بڑی چالاکی سے تاثر دینے کی کوشش کررہے ہیں گویا یہ کوئی نئی بات کر رہے ہیں حالانکہ ان کا نظریہ سرسید احمد خان والا ہی ہے۔ مناسب محسوس ہوتا ہے کہ درست تاریخی آئینہ سامنے رکھا جائے۔ برصغیر میں انگریزوں کی آمد کے ساتھ یہاں سرمایہ دارانہ اداروں کو فروغ…

مین سٹریم’اصل’ المورد اور ٹی ٹی پی دومتبادل بیانیے

سیاستِ شرعیہ کے باب میں ایک ہے مسلمانوں کی علمی مین اسٹریم (سوادِ اعظم) کا بیانیہ۔ یہاں کا دیوبندی و اہلحدیث سے لے کر بریلوی اور شیعہ تک کم از کم اِس باب میں ایک پیج پر ہے۔ پاکستان کا معاملہ کچھ خاص ضرور ہے؛ اس لیے کہ خود اِس ملک اور قوم ہی کے…

دہشت گردی کے اسباب اور چارمشہوربیانیے

دنیا کو گزشتہ چند دہائیوں سے جس نوع کی دہشت گردی کا سامنا ہےاُس کے سدِّ باب کے لیے چار بنیادی قِسم کے جوابی بیانیے تشکیل پا چکے ہیں – گو اگرچہ یکساں صراحت سے نہیں۔ کچھ پوری طرح منظم ہو چکے ہیں اور کچھ ابھی تنظیم کے محتاج۔ تاہم اِن کے خدو خال اتنے…

مولانا تقی عثمانی کی فکراورشدت پسندی کابیانیہ

مولانا تقی عثمانی صاحب نہ صرف دیوبندی مکتبِ فکر کی بلکہ عالمِ اسلام کی بڑی شخصیات میں سے ہیں۔ اللہ نے ان سے دین کا کام بڑی سطح پر لیا ہے۔ علم کے ساتھ آپ نے ڈاکٹر عبدالحی عارفی رحمۃ اللہ علیہ (خلیفۂ مجاز مولانا اشرف علی تھانوی رحمۃ اللہ علیہ) سے اصلاح و استرشاد…

مفتی منیب الرحمن ، جاویداحمدغامدی اور عالمی سٹیٹس کو

چند دن پہلے مفتی منیب الرحمن صاحب اور جاوید احمد غامدی صاحب کے مابین ایک مباحثہ ہوا ۔ اس پر طرفین نے خود بھی بولا اور لکھا۔ تاہم مسئلہ چونکہ ’بیانیہ‘ کے نام پر ملک کے منہ میں ایک زبان دینے کا ہے، اور وہ ’زبان‘ آدھی پونی تو میڈیا خود ہے، صرف اس کا…

مولانامودودی کامذہبی بیانیہ اور دہشت گردی

پچھلے کچھ عرصے سے کچھ احباب کی طرف سے یہ اعتراض دہرایا جارہا ہے کہ مسلمانوں کی بعض تنظیموں کی دہشت گردانہ کارروائیوں کے پس پشت ایک بڑی وجہ مولانا مودودی (رح) کا پیش کردہ “سیاسی اسلام” کا تصور ہے جس کی رو سے مسلمانوں پر “عالمی خلافت” کا قیام لازم ہے۔ یہ مقدمہ نہایت…

‘علامہ اقبال اورشدت پسندی کا بیانیہ’ انکی جہادی وسیاسی فکرکی روشنی میں

جس طرح اردو کے مایۂ ناز شاعر مولانا الطاف حسین حالی پر “ابتر ہمارے حملوں سے حالی کا حال ہے” کی مشق کی گئی، اسی طرح علامہ اقبال پر بھی اعتراضات کا سلسلہ دراز ہوا جو ان کی زندگی ہی میں شروع ہو گیا تھا۔ یہ اعتراضات شخصی بھی ہیں، ان کے کلام کے شعری،…

مولانامودودیؒ کی دینی فکراورشدت پسندی کا بیانیہ

مولانا عمار خان ناصر ایک بڑے دینی علمی خانوادے سے تعلق رکھتےہیں، ان کے محترم دادا مولانا سرفراز خان صفدر(مرحوم) دینی حلقوں، خاص کر دیوبندی علمی روایت میں بہت احترام کی نگاہ سے دیکھے جاتے ہیں، ان کے والد محترم مولانا زاہد الراشدی دینی،علمی اور سیاسی حلقوں میں محترم ہیں۔ جناب جاوید احمد غامدی کےسکول…

12