جدید تعبیرات اسلام کو جانچنے کا سادہ پیمانہ

۔ جو لوگ بڑے طمطراق سے تمام مفسرین، محدثین، متکلمین، فقہا و صوفیا پر جہالت و کم عقلی کا فیصلہ صادر کرتے ہیں انکا مفروضہ یہ ھے کہ نزول قرآن کے بعد امت میں پہلی مرتبہ یہ حادثہ رونما ھوا کہ اچانک قرآن کہیں سے انکے ھاتھ لگ گیا ھے اور اب یہ انکی ذمہ…

لبرل، سیکولر و متجددین کی دھری منطق

فرض کریں اگر روایتی خاندانی معاشرتی نظام کے اندر عورت پر ظلم ھوجائے تو سیکولر، لبرل اور متجددین اسے مولوی کے روایتی اسلام کا شاخسانہ قرار دینے میں ذرا بھر تامل نہیں کرتے اور تقاضا کرتے ہیں کہ تحفظ عورت کیلئے اسے آزادی ملنی چاھئے، مولوی کے اسلام نے اسے جکڑ رکھا ھے۔ اور اگر…

علم معاشیات کا تصور انفرادیت و عقلیت

علم معاشیات تنویری ڈسکورس سے نکلنے والا وہ شعبہ علم ھے جس کا مقصد سرمایہ دارانہ معاشرتی و ریاستی نظم کا علمی جواز دینا نیز اسے قائم رکھنے کیلئے پالیسی فریم ورک فراھم کرنا ھے۔ یہ کسی آفاقی انسانی رویے یا سچائیوں سے نہیں بلکہ اس مخصوص تصور انفرادیت کے رویے سے بحث کرتی ھے:…

کیا اختلافات صرف مذہبی لوگوں کا شیوہ ہیں ۔ ۔ ۔

نظام کی تسخیری قوت اور سائنسی علمیت پر اندھے اعتماد پر مبنی تصورات ۔۔۔ عام بلکہ ‘جدید تعلیم یافتہ’ لوگوں کا خیال یہ ھوتا ھے کہ شاید اختلافات مذہبی لوگوں کا شیوا ھے، یہ سائنس دان تو گویا متفق الخیال ھی ھوتے ہیں اور سب کے منہ سے ایک ہی پالیسی کی بات نکلتی ھوگی…

ھیومن رائٹس اور حقوق العباد کا بنیادی فرق

ھیومن (جیسے کہ ایک پوسٹ میں واضح کیا گیا) خدا کی باغی تصور ذات ھے۔ یہ تصور ذات آزادی بطور قدر کو خیروشر، عدل و ظلم اور حق و باطل کا پیمانہ گردانتی ھے اور اسی کی بنیاد پر انہیں ڈیفائن کرتی ھے (آزادی بطور قدر کی وضاحت بھی ایک پوسٹ میں کی گئی تھی)۔…

الحاد پر تنقید کا غزالی منہج

امام غزالی (رح) کسی فکر پر تنقید کے دو مناھیج کا ذکرکرتے ہیں (1) خارجی تنقید (2) داخلی تنقید ۔ خارجی تنقید کا مطلب ایک نظرئیے کو کسی دوسرے نظریاتی فریم ورک کے معیارات سے جانچ کر رد کرنا ھوتا ھے۔ مثلا اگر ھم مغربی تصورات کو قرآن و سنت پر پرکھ کر رد کریں…

جدید انسان کا مذھب (2)

پچھلی پوسٹ میں علم معاشیات کے ایک بڑے نظرئیے نیوکلاسیکل اکنامکس (یا لبرل سرمایہ داری) کی بابت بتایا گیا کہ اپنی ساخت میں یہ ایک ڈاگمیٹک نظریہ ھے۔ یہاں اسی ضمن میں علم معاشیات کے دوسرے بڑے سیکولر نظرئیے سوشل ازم (یا ریاستی سرمایہ داری) کا مختصر نقشہ دیکھتے ہیں: –> انسان کیا ھے؟ ۔۔۔۔۔۔۔…

علم معاشیات کا تصور مارکیٹ

مارکیٹ کا مفہوم بالمعوم place where exchange of goods and services takes place (خرید و فروخت کا مقام) لیا جاتا ھے، مگر یہ اسکی درست اور واضح (essential) تعبیر نہیں اور اسی غلط تعبیر کی بنا پر بہت سی غلط فہمیاں بھی جنم لیتی ہیں۔ مارکیٹ کی اس تعبیر کی بنا پر صرف ‘دکانوں کے…

کیا غیر جانبداریت (تعصبات سے بالاتر ھونا) ممکن ھے؟

آج کل اپنی بات وزنی بنانے کیلئے چند الفاظ کا استعمال بے دریغ کیا جاتا ھے، مثلا میرا تجزیہ معروضی (objective) ھے، ہمیں اسلاف کو رد کرکے غیر متعصبانہ (یعنی نیوٹرل) روش اختیار کرنی چاھئے، جو بات عقل کے پیمانے پر پورا اترے اسے ہی ماننا چاہئے (گویا عقل کا کوئ ایک ہی آفاقی پیمانہ…

ھیومن (Human) کون ھے؟۔۔۔ھیومن ازم کی بنیادیں

عام طور پر ھیومن کا ترجمہ انسان کرکے یہ سمجھا جاتا ھے کہ ‘انسان تو بس انسان ہی ھوتا ھے، چاھے مشرق کا ھو یا مغرب کا’۔ مگر یہ معاملہ اتنا سادہ نہیں بلکہ پیچیدہ ھے۔ درحقیقت ہر تہذیب (نظام زندگی) کا ایک اپنا مخصوص تصور انفرادیت ھوتا ھے۔ اس تصور انفرادیت کے تعین کی…

مغربی (تنویری) و مذھبی تصورات آزادی کا بنیادی اور اصولی فرق

اکثر و بیشتر مذھبی اور مغربی فکر میں پاۓ جانے والے تصورات آزادی کو بری طرح خلط ملط کرکے ”اسلام بھی انسانی آزادی کا حامی ھے” کا دعوی داغ دیا جاتا ھے، یہی نہیں بلکہ یہاں تک کہہ دیا جاتا ھے کہ ”اصل آزادی تو ھے ہی اسلام میں”۔ اچھی طرح سمھنا چاھئے کہ تصور…

اخلاقیات اور جبر ۔۔۔۔۔۔ جدید ذہن کی قلابازیاں

موجودہ نظم کیلئے تو جائز مگر مذھب کیلئے ناجائز موٹروے پر کار ڈرائیو کرتے وقت یہ بات باآسانی محسوس کی جا سکتی ھے کہ ہمارے یہاں 95 فیصد سے زیادہ ڈرائیور سپیڈ لمٹ اور ڈرائیونگ لائنز کا سختی سے دھیان رکھتے ہیں، یعنی 120 سے زیادہ رفتار اختیار نہیں کرتے نہ ہی بلا وجہ لائنز…

علم معاشیات کا تصور Perfect Competition (مکمل مسابقت)

جدید دنیا کا “آئیڈئیل” (‘خیر القرون’) اور خیرالقرون کی طرف مراجعت کی اہمیت علم معاشیات میں مکمل مسابقت سے مراد ذاتی اغراض کی جستجو پر مبنی تعلقات سے وجود میں آنے والا ایک ایسا مسابقتی معاشرتی نظم ھے جسکے نتیجے میں سرمائے میں امکانی حد تک زیادہ سے زیادہ اضافہ ممکن ھوسکےگا۔ اس نظم کی…

اشتراکیت بھی سرمایہ داری ہی ھے

عام طور پر اشتراکیت کو سرمایہ داری سے علی الرغم کوئی نظام سمجھا جاتا ھے۔ اس غلط فہمی کی وجہ یہ ھے کہ سرمایہ داری کو محض اسکی ایک مخصوص شکل ‘لبرل یا مارکیٹ’ سرمایہ داری کے ہم معنی فرض کر لیا جاتا ھے جبکہ یہ تصور درست نہیں۔ درحقیقت یہ دونوں (لبرلزم اور اشتراکیت)…

سوشل ازم اور کمیون ازم کا فرق

سوشل ازم سے مراد مزدوروں کی ریاستی ڈکٹیٹرشپ کے زیر نگرانی ایک پالیسی پیکج ھے جبکہ کمیونزم کا مطلب اس پالیسی پیکج سے دریافت ھونے والی اشتراکی جنت (Utopia) ھے۔ اشتراکی مفکرین کا خیال ھے کہ انسانی تاریخ ایک مسلسل عمل کا نام ھے جو حصول آزادی کیلئے ھونے والے مادے کے تغیرات اور اسکے…